بلوچ حریت پسند رہنما ڈاکٹراللہ نذر بلوچ کی اہلیہ، معصوم بیٹی اور دیگر رشتہ دارخواتین کو حراست میں لے کر غائب کر نا انتہا درجے کاریاستی ظلم وبربریت ہے۔ الطاف حسین

متحدہ قومی موومنٹ کے بانی وقائدجناب الطاف حسین نے سیکوریٹی فورسزکی جانب سے بلوچ حریت پسند رہنما ڈاکٹراللہ نذربلوچ کی اہلیہ، معصوم بیٹی اور دیگر رشتہ دارخواتین کوحراست میں لے کرغائب کرنے کی شدید مذمت کی ہے اوراسے انتہا درجے کاریاستی ظلم وبربریت قراردیاہے۔ اپنے بیان میں جناب الطاف حسین نے کہا کہ جنگوں میں بھی عورتوں اوربچوں کوگزند نہیں پہنچائی جاتی اوران کے ساتھ صلہ رحمی کا سلوک کیاجاتا ہے لیکن بلوچستان میں ریاستی ظلم و بربریت تمام حدوں کو عبورکرچکا ہے ، بلوچستان میں بلوچ عوام عزت سے جینے کاحق مانگ رہے ہیں توان کی آواز کوسننے کے بجائے انہیں ریاستی طاقت سے کچلا جارہا ہے، اب تک تو بے گناہ بلوچ نوجوانوں کو غائب کرکے ان کی مسخ شدہ لاشیں پھینکی جارہی تھیں مگراب بلوچ ماؤں بہنوں حتیٰ کہ معصوم بچوں تک کو ریاستی ظلم وبربریت کا نشانہ بنایا جارہا ہے اورانہیں بھی غائب کیا جارہاہے اورنفرت وتعصب میں بلوچوں کے بنیادی انسانی حقوق کی سنگین پامالی کی جارہی ہے ۔ جناب الطاف حسین نے بلوچ حریت پسند رہنما ڈاکٹراللہ نذربلوچ کی اہلیہ ، معصوم بچوں اور دیگر بلوچ خواتین کوحراست میں لے کرغائب کرنا سراسرظلم ہے جسے کسی بھی صورت میں جائز قرارنہیں دیا جاسکتا۔ جناب الطاف حسین نے کہا کہ بلوچ عوام پر ڈھایا جانے والا یہ ظلم وبربریت قہرخداوندی کو دعوت دے رہا ہے لہٰذا ظلم کرنے والوں کو چاہیے کہ وہ اللہ کے عذاب سے ڈریں ، ڈاکٹراللہ نذر بلوچ کی اہلیہ، معصوم بچی اور تمام بلوچ ماؤں بہنوں کوفی الفوررہاکریں اور ان مظالم پر بلوچ عوام سے معافی مانگیں۔ جناب الطاف حسین نے بلوچ ماؤں، بہنوں ، بزرگوں اوربچوں سمیت پوری بلوچ قوم سے دلی ہمدردی اور یکجہتی کا اظہار کیا۔