سانحہ 12مئی آئی ایس آئی کا تشکیل کردہ شیطانی منصوبہ تھا جس میں ایم کیوایم کے 14کارکنان بھی شہید ہوئے ۔ ندیم نصرت

متحدہ قومی موومنٹ ( پاکستان ) کے کنوینرندیم نصرت نے سانحہ 12 مئی کے شہداء کی دسویں برسی کے موقع پر شہداء کوزبردست خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ سانحہ 12 مئی آئی ایس آئی کا تشکیل کردہ شیطانی منصوبہ تھا جس میں ایم کیوایم کے 14کارکنان بھی شہید ہوئے ۔ ندیم نصرت نے کہا کہ اگر اقوام متحدہ کے نمائندوں کے ذریعے 12 مئی کے واقعہ کی تحقیقات کرائی جائیں توایم کیوایم ثبوت پیش کرنے کے لئے تیارہے کہ اس شیطانی منصوبہ اور خونریزی کے پیچھے آئی ایس آئی کا ہاتھ  تھا۔ انہوں نے کہا کہ ایک نجی ٹی وی کے اینکرپرسن نے جومہاجردشمن کے طورپرجانے پہچانے جاتے ہیں، اس نے آئی ایس آئی کے طے شدہ 12مئی کے سانحہ کا الزام ایم کیوایم کے سرتھوپتے ہوئے کہا کہ الطاف حسین کی ایم کیوایم نے یہ واقعہ کرایا۔ ندیم نصرت نے کہا کہ قائد تحریک الطاف حسین تو26سال سے لندن میں رہائش پذیرہیں اور دس سال پہلے بھی پاکستان میں تنظیمی معاملات فاروق ستار، انیس قائم خانی اورمصطفےٰ کمال ہی چلانے والے تھے اور12مئی کوبھی ریلی کا انعقاد انہی لوگوں نے کیا تھا، ایم کیوایم کی طرح دیگرسیاسی جماعتوں نے بھی اپنے اپنے جلسے جلوس کیوں کئے تھے، ایم کیوایم شعبہ ء اطلاعات نے اس واقعہ کی تحقیقات کرکے ایک وڈیو فلم بھی سب کوبھیجی تھی جس میں تمام سیاسی جماعتیں جواس وقت کے چیف جسٹس افتخارچوہدری کا استقبال کرنے گئی تھیں توان کے لوگوں کے ہاتھوں میں گنیں اوراسلحہ کہاں سے آیا؟ ندیم نصرت نے کہا کہ یہ سراسرزیادتی ہے کہ آئی ایس آئی کے تشکیل کردہ اس شیطانی منصوبہ کا سارا الزام ایم کیوایم اوراس وقت کے صدر جنرل پرویزم مشرف پر ڈال دیا گیا اس طرح ایک تیر سے دو شکار کرنے کی کوشش کی گئی۔ ندیم نصرت نے آئی ایس آئی کے اس شیطانی منصوبہ میں جاں بحق ہونے والے شہدا کو خراج عقیدت پیش کیا اوردعا کی کہ اللہ تعالیٰ تمام جاں بحق ہونیوالے افراد کو شہادت کا درجہ عطا کرے ، انہیں جنت الفردوس میں جگہ دے ۔ انہوں نے شہداء کے لواحقین سے بھی دلی تعزیت کا اظہار کیا۔