مہاجرقوم کا مستقبل نوجوان طبقہ کے ہاتھ میں ہے، قائد تحریک الطاف حسین

متحدہ قومی موومنٹ (پاکستان ) کے قائد جناب الطاف حسین نے کہا ہے کہ کسی بھی معاشرے میں نوجوان طبقہ انتہائی اہمیت کا حامل ہوتا ہے اور مہاجرقوم کا مستقبل نوجوان طبقہ کے ہاتھ میں ہے ۔ یہ بات انہوں نے خواتین کے اجتماع سے ٹیلی فون پر خطاب کرتے ہوئے کہی ۔ اس موقع پر مختلف تعلیمی اداروں کی طالبات اور کمسن بچے بچیاں بھی بڑی تعداد میں موجود تھیں۔ اپنے خطاب میں جناب الطاف حسین نے کہا کہ کڑے اور مشکل حالات میں بھی ہمت وجرات کا مظاہرہ کرنے والے ثابت قدم بزرگ ،مائیں ، بہنیں اور نوجوان تحریکی ساتھی میرا فخر ہیں، اتحاد و یکجہتی اور عقیدت ومحبت کے اظہار پر کراچی اورحیدرآباد کے عوام بالخصوص نوجوان طلبا وطالبات کو میں دل کی گہرائیوں سے زبردست خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ قوم کا مستقبل نوجوانوں کے ہاتھ میں ہے اوراب مہاجروں کے غصب شدہ حقوق کی جدوجہد کو آگے بڑھانے کیلئے نوجوان طبقہ کو میدان عمل میں آنا ہوگا۔ جناب الطاف حسین نے کہا کہ اسٹیبلشمنٹ نے ایم کیوایم اورمہاجروں کا ووٹ بنک تقسیم کرنے کیلئے مصنوعی ٹولے تشکیل دیئے اور ان ٹولوں کو ہرقسم کی سرپرستی فراہم کی جارہی ہے۔ ایک ضمیرفروش ٹولہ پر اسٹیبلشمنٹ نے50 ارب روپے سے زائد رقم خرچ کردی لیکن اللہ تعالیٰ کے فضل وکرم سے سندھ کے شہری عوام کو خریدنے میں ناکام ثابت ہوئی ۔ انہوں نے کہا کہ دولت سے انسان قیمتی سے قیمتی زیور ، ہیرے موتی خریدسکتا ہے لیکن دنیا بھر کی دولت جمع کرنے کے باوجود محبت کو خریدا نہیں جاسکتا۔ کسی بھی قوم میں قائد خود نہیں بنا کرتے بلکہ اللہ تعالیٰ قیادت پیدا کرتا ہے ۔ میں نے اپنی تقاریرمیں ہمیشہ کہا ہے کہ میرانام الطاف حسین ہے ، میرے نام کے ساتھ لفظ ’’حسین ‘‘ نواسہ رسول ؐ کا صدقہ ہے،میں بھی امام حسین ؑ کی طرح اپنی گردن کٹانا پسند کروں گا لیکن یزیدیت کے سامنے اپنا سرہرگز نہیں جھکاؤں گا۔ انہوں نے کہا کہ ذاتی مفادات کی خاطر اپنے ظرف وضمیرکا سودا کرنے والوں نے ایم کیوایم کے شہیدوں ، اسیرولاپتہ اور روپوش ساتھیوں کی قربانیوں کو نقصان پہنچانے کا جوعمل کیا ہے اس کا حساب اللہ تعالیٰ ضرور لے گا۔ آج شہیدوں کے لواحقین سیکریٹریٹ ٹیلی فون کرکے روتے ہیں کہ کوئی ان کاپرسان حال نہیں ہے اور قوم کے میرجعفروں اورمیرصادقوں کے گھناؤنے عمل کی وجہ سے شہداء کے بچے تعلیم ، صحت اورغذا کی سہولیات سے محروم ہیں ۔ سیکریٹریٹ کے ساتھی اپنے جیب خرچ سے چندہ جمع کرکے ان مجبور و پریشان حال خاندانوں کی امداد کرنے کی کوشش کرتے ہیں لیکن شہداء کی بیواؤں ، یتیم بچوں اوربوڑھے والدین کا تڑپنا مجھ سے نہیں دیکھا جاتا اگر قدرت نے موقع دیا تو شہیدوں کے لواحقین کو تڑپانے والوں سے حساب لیاجائے گا۔ جناب الطاف حسین نے کہا کہ یہ اللہ تعالیٰ کا کرم اوراحسان ہے کہ اس نے پارٹی میں موجود  گند اورکچرا الگ کر دیا ، اب انشاء اللہ کراچی ، حیدرآباد، میرپورخاص، نواب شاہ، سانگھڑ، سکھر، ٹنڈوالہیار،ٹنڈوجام، شہداد پور اوردیگر مہاجراکثریتی شہروں میں مخلص، بہادر اورباوفا  کارکنان آگے آئیں گے اور کڑے وقت میں پیٹھ دکھانے والوں کو اب تحریک میں واپس نہیں لیاجائے گا۔ جناب الطاف حسین نے نوجوان طلبا وطالبات پرزور دیا کہ وہ اپنی تعلیم پر بھر پور توجہ دیں، نقل کے رحجان سے مکمل پرہیز کریں ،دل لگا کر علم حاصل کریں ،والدین ، اساتذہ، بزرگوں اورخواتین کا احترام کریں، باہمی اختلافات ختم کرکے اتحاد کا مظاہرہ کریں، معاشرتی برائیوں سے خود کو دوررکھیں ، پان ، سگریٹ ،گٹکااوردیگر مضر صحت اشیاء استعمال کرنے سے گریز کریں اوراپنی صحت و تندرستی پر خاص توجہ دیں۔ جناب الطاف حسین نے ماؤں کے عالمی دن کے موقع پر تمام وفا پرست ماؤں کو دلی مبارکباد کے ساتھ ساتھ تمام کارکنان وہمدرد عوام کورمضان المبارک کی پیشگی مبارکباد بھی پیش کی۔ اس موقع پر معصوم بچے اوربچیوں نے بھی جناب الطاف حسین سے براہ راست گفتگو کی اور ان سے اپنی عقیدت ومحبت کا اظہار کیا۔