پی آئی اے کے طیارے سے ہیروئن برآمد ہونے کا واقعہ انتہائی شرمناک ہے۔ ندیم نصرت،کنوینر ایم کیوایم

حدہ قومی موومنٹ(پاکستان ) کے کنوینرندیم نصرت نے لندن کے ہیتھروایئرپورٹ پر پی آئی اے کے طیارے سے ہیروئن برآمد ہونے کے واقعہ کو انتہائی شرمناک قراردیاہے۔ اپنے ایک بیان میں ندیم نصرت نے کہا کہ اب تک میڈیا کے ذریعے سامنے آنے والی خبروں کے مطابق پی آئی اے کی یہ پرواز اسلام آباد سے لندن پہنچی تھی اوریہ بچہ بچہ اچھی طرح جانتا ہے کہ ایئرپورٹ پر صرف ایئرپورٹ سیکوریٹی فورس ہی نہیں ہوتی بلکہ آئی ایس آئی، ایم آئی، آئی بی اوردیگرسیکوریٹی ادارے بھی تعینات ہوتے ہیں اورسیکوریٹی اداروں کے گٹھ جوڑ کے بغیرہیروئن کا طیارے تک پہنچنااور اسے طیارے کے خفیہ خانوں میں چھپانا ممکن ہوہی نہیں سکتا۔ ندیم نصرت نے کہا کہ آج پی آئی اے کے طیارے سے ہیروئن برآمد ہونے کے واقعہ نے قائد تحریک الطاف حسین کے گزشتہ روز کے خطاب میں بیان کردہ ان نکات کو درست ثابت کردیاہے کہ ہمارے سیکوریٹی ادارے اپنے اولین فرائض اداکرنے کے بجائے غیرقانونی سرگرمیوں اور کاروبارمیں ملوث ہیں۔ ندیم نصرت نے مطالبہ کیا کہ اس واقعہ کی تحقیقات کرائی جائے کہ ہیروئن طیارے تک کیسے پہنچی اورجوبھی اس میں ملوث ہوں انہیں گرفتارکیا جائے ۔ ندیم نصرت نے مطالبہ کیا کہ یہ تحقیقات اقوام متحدہ کی ٹیم سے کرائی جائے کیونکہ پاکستان کے سیکوریٹی اداروں سے اس معاملے کی شفاف انکوائی نہیں ہوسکتی کیونکہ یہ واقعہ انہی سیکوریٹی اداروں کے ہوتے ہوئے ہی رونما ہواہے جوشک کی بناء پر مسافروں کوتوطیارے سے اتار لیتے ہیں لیکن انہیں طیارے تک ہیروئن پہنچنے اوراسلام آباد سے لندن پہنچنے کی اطلاع نہ ہوسکی۔ انہوں نے کہا کہ اس واقعہ نے پوری دنیا میں پاکستانیوں کا سرشرم سے جھکا دیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس واقعہ کے حوالے سے پاکستان میں سیکوریٹی ایجنسیوں کی ناکامی اورنااہلی کے ذمہ دار وفاقی وزیرداخلہ چوہدری نثاربھی ہیں ۔